Navigation Menu+

بالوں کی سنتیں

بالوں کی سنتیں

by مفتی امان اللہ خان قائمخانی

نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے سر مبارک کے بالوں کی لمبائی کانوں کے درمیان تک اور دوسری روایت کے مطابق کانوں تک اور ایک اور روایت کے مطابق کانوں کی لَو تک تھی، ان کے قریب تک ہونے کی بھی روایات ہیں۔[1

پورے سر پر بال رکھنا کانوں کی لَو تک یا اس سے کسی قدر نیچے سنّت ہے اور پورا سر منڈوادینا بھی سنّت ہے اور اگر کتروانا چاہے تو پورے سر کے بال سب طرف سے برابر کتروانا جائز ہے لیکن آگے کی طرف سے بڑے رکھنا اور گردن کی طرف سےچھوٹے کرادینا جس کو’’انگریزی بال‘‘ کہتے ہیں جائز نہیں۔ اسی طرح سر کا کچھ حصہ منڈوادینا اور کچھ چھوڑ دینا بھی جائز نہیں۔ اللہ تعالیٰ ہر مسلمان کو اس سے بچائے۔ [2

 داڑھی کو بڑھانے اور مونچھوں کوکم کرنےکےمتعلق احادیث میں حکم وارِد ہے۔[3]  داڑھی منڈانا یا ایک مشت سے کم کتروانا حرام ہے۔[4]؎ اللہ تعالیٰ ہر مسلمان کو اس سے محفوظ رکھے، ایک مشت داڑھی رکھنا واجب ہے اور ایک مشت کی مقدار سنّت سے ثابت ہے۔

 مونچھوں کو کترنے میں مبالغہ کرنا سنّت ہے۔ لمبی لمبی مونچھیں رکھنے پر حدیثوں میں سخت وعید آئی ہے۔[5

زیرِ ناف، بغل اور مونچھوں کے بال اور ناخن وغیرہ دور کرکے صاف ستھرا رہنا چاہیے۔ اگر چالیس دن گزر جائیں اور صفائی نہ کرے تو گنہگار ہوگا۔[6

 بالوں کو دھونا، تیل لگانا اور کنگھا کرنا مسنون ہے لیکن ضرورت نہ ہو تو بیچ میں ایک آدھ دِن ناغہ کردینا چاہیے۔[7

 کنگھا کریں تو پہلے دائیں جانب سے شروع کریں۔[8

 کنگھا کرتے ہوئے یا حسبِ ضرورت جب بھی آئینہ دیکھیں تو یہ دُعا کریں

 اَللّٰہُمَّ اَنْتَ حَسَّنْتَ خَلْقِیْ فَحَسِّنْ خُلُقِیْ [9

ترجمہ: اے اللہ! جیسے آپ نے میری صورت اچھی بنائی، میرے اخلاق بھی اچھے کردیجیے۔

 

 

[1]؎    شمائل ترمذی:2 ،  باب ماجاء فی شعر رسول اللہ صلّی اللہ علیہ وسلّم
[2]؎    غنیۃ الطالبین:  43،44… مرقاۃ: 8/278،279… بہشتی زیور11/155
[3]؎  صحیح البخاری:2/575،باب اعضاء اللحٰی… صحیح مسلم :1/129،باب خصال الفطرۃ
[4]؎   بہشتی زیور: 11/115
[5]؎    بہشتی زیور:11/155
[6]؎   صحیح البخاری:2/875  ، باب تقلیم الاظفار
[7]؎     اوجز المسالک:12/268
[8]؎    صحیح البخاری:1/61، باب التیمّن فی دخول المسجد وغیرہ… بہشتی زیور: 11/116
[9]؎      مشکوٰۃ المصابیح:2/381،باب الترجل… حصن حصین: 346