Navigation Menu+

بیت الخلاء آنے جانے کی دُعائیں اور سنتیں

بیت الخلاء آنے جانے کی دُعائیں اور سنتیں

by مفتی امان اللہ خان قائمخانی

 اِستنجے کے لیے پانی اور ڈھیلے دونوں لے جائیں۔ تین ڈھیلے یا پتھر ہوں تو مستحب ہے۔[1]؎ اگر پہلے سے بیت الخلاء میں اِنتظام کیا ہوا ہو تو کافی ہے، فلش پاخانوں میں ڈھیلوں کی وجہ سے دِقّت ہورہی ہے لہٰذا بعض علماء کرام نے ٹوائلٹ پیپر استعمال کرنے کا مشورہ دیا ہے تاکہ فلش خراب نہ ہو۔

 حضور صلی اللہ علیہ وسلم سر ڈھانک کر اور جوتا پہن کر بیت الخلاء تشریف لے جاتے تھے۔[2

 بیت الخلاء میں داخل ہونے سے پہلے یہ دُعا پڑھے

 بِسْمِ اللہِ ، اَللّٰھُمَّ  اِنِّیۤ اَعُوْذُبِکَ مِنَ الْخُبُثِ وَالْخَبَآئِثِ[3

ترجمہ: اے اللہ! میں تیری پناہ چاہتا ہوں خبیث جنوں سے، مرد ہوں یا عورت۔

فائدہ:مُلّا علی قاری رحمۃ اللہ علیہ نے مرقاۃ میں لکھا ہے کہ احادیث میں ہے کہ اس دُعا کی برکت سے بیت الخلاء کے خبیث شیاطین اور بندہ کے درمیان پردہ ہوجاتا ہے جس سے وہ شرمگاہ نہیں دیکھ پاتے۔ نیز یہ بھی لکھا ہے کہ خُبُثِ   کے ’’ب‘‘ پر پیش اور جزم دونوں جائز ہیں۔[4

 بیت الخلاء میں داخل ہوتے وقت پہلے بایاں قدم رکھے۔[5

 جب بدن ننگا کریں تو آسانی کے ساتھ جتنا نیچا ہوکر کھول سکیں اُتنا ہی بہتر ہے۔[6

۶) بیت الخلاء سے نکلتے وقت داہنا پیر باہر نکالیں اور باہر آکر یہ دُعا پڑھیں

 غُفْرَانَکَ ، اَلْحَمْدُ لِلہِ الَّذِیْٓ اَذْھَبَ عَنِّی الْاَذٰی وَعَافَانِیْ[7

ترجمہ: اے اللہ! میں تجھ سے مغفرت کا سوال کرتا ہوں، سب تعریفیں اللہ ہی کے لیے ہیں جس نے مجھ سے اِیذا دینےوالی چیز دور کی اور مجھے عافیت عطا فرمائی۔

 بیت الخلاء جانے سے پہلے انگوٹھی یا کسی چیز پرقرآن شریف کی آیت یا حضور صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم کا مبارک نام لکھا ہو اور وہ دِکھائی دیتا ہو تو اُس کو اُتار کر باہر ہی چھوڑ دیں۔[8]؎ تعویذ جس کو موم جامہ کرلیا گیا ہو یا کپڑے میں سی لیا گیا ہو اس کو پہن کر جانا جائز ہے۔

 رفع حاجت کے وقت قبلہ کی طرف نہ چہرہ کریں اور نہ اُس طرف پیٹھ کریں۔[9

 رفع حاجت کرتے وقت بلاضرورتِ شدیدہ کلام نہ کریں۔     اِسی طرح اللہ تعالیٰ کا ذِکر بھی نہ کریں۔[10

 پیشاب،پاخانےکی چھینٹوں سےبہت بچیں کیوں کہ اکثر عذابِِ قبر پیشاب کے چھینٹوں سےنہ بچنے کی وجہ سے ہوتا ہے۔ [11

 پیشاب کرتے وقت یا اِستنجا کرتے وقت عضوِ خاص کو دایاں ہاتھ نہ لگائیں بلکہ بایاں ہاتھ لگائیں، اِستنجا بائیں ہاتھ سے کریں۔[12

 بعض جگہ بیت الخلاء نہیں ہوتا اس وقت ایسی آڑ کی جگہ میں  رفع حاجت کرنا چاہیے، جہاں کسی دوسرے آدمی کی نگاہ  نہ پڑے۔[13

 پیشاب کرنے کے لیے نرم جگہ تلاش کریں تاکہ چھینٹے نہ اُڑیں اور زمین جذب کرتی جائے۔[14

بیٹھ کر پیشاب کریں۔ کھڑے ہوکر پیشاب نہ کریں۔[15

 پیشاب کرنے کے بعد اِستنجا سکھانا ہو تو دِیوار وغیرہ کی آڑ میں سکھانا چاہیے۔[16

 وضو سنّت کے موافق گھر پر کرنا چاہیے۔[17

 سنتیں گھر پر پڑھ کر جاناچاہیے۔ موقع نہ ہو تو مسجدہی میں پڑھ لے۔[18

فائدہ:آج کل جب کہ سنتوں کو ترک کیا جارہا ہے۔سنن کا مسجد میں پڑھنا افضل ہے۔[19

 

 

[1]؎  صحیح مسلم:1/163 ،باب مایقول اذا دخل الخلاء…جامع الترمذی: 1/7 ، باب مایقول اذا دخل الخلاء…سنن ابن ماجۃ :26 ،باب مایقول اذا دخل الخلاء
[2]؎    کنزالعمال :7/20(17876) ، باب التخلی وآدابہ
[3]؎    صحیح البخاری:1/26 ،  باب مایقول عندالخلاء
[4]؎      مرقاۃ المفاتیح:2/50(337) ، باب آداب الخلاء
[5]؎  قال الالبانی فی ارواء الغلیل:1/132’’ لا اعرف دلیلہٗ ولعلہٗ القیاس علی الخروج من المسجد‘‘
[6]؎   جامع الترمذی:1/10،باب فی الاستتار عندالحاجۃ…سنن ابی داؤد :1/6 ،باب الاستتار فی الخلاء
[7]؎   سنن ابن ماجہ: 123  ، باب مایقول اذا خرج من الخلاء
[8]؎    سنن ابی داؤد:1/4 ،باب الخلاء یکون الخاتم فیہ ذکراللہ یدخل بہ الخلاء/  سنن ابن ماجۃ :  123(303) ،باب ذکر اللہ عزّوجل علی الخلاء والخاتم فی الخلاء
[9]؎   صحیح البخاری:1/26 (146) ، باب لاتستقبل القبلۃ بغائط اوبول…جامع الترمذی : 1/8 ، باب فی النہی عن استقبال القبلۃ بغائط اوبول
[10]؎    سنن ابی داؤد: 1/3 باب کراہیۃ الکلام عند الخلاء
[11]؎     سنن ابنِ ماجۃ: 126(348) ،باب التشدید فی البول
[12]؎  صحیح البخاری:1/27(156) باب لایمسک ذکرہ بیمینہٖ اذا بال… سنن ابی داؤد : 1/5باب کراہیۃ مس الذکر بالیمین فی الاستبراء
[13]؎       سنن ابی داؤد:1/6 باب الاستتار فی الخلاء … سنن  ابن ماجۃ:28 باب السّاعد لسراز فی القضاء
[14]؎      جامع الترمذی: باب اذا ارادالحاجۃ ابعد فی المذہب 1/12… سنن ابی داؤد:1/2 باب الرجل یتبواء لبولہ
[15]؎      جامع الترمذی:1/9 باب النہی عن البول قائمًا
[16]؎     ردالمحتار: 1/337
[17]؎     مرقاۃ المفاتیح: 2/404
[18]؎    مرقاۃ المفاتیح: 2/39
[19]؎     کمالاتِ اشرفیہ:156