Navigation Menu+

وضو کی سنتیں

وضو کی سنتیں

by مفتی امان اللہ خان قائمخانی

وضو میں اٹھارہ(۱۸)سنتیں ہیں۔ان کو ادا کرنے سے کامل طریقے سے وضو ہوجائے گا۔

 وضو کی نیت کرنا۔ مثلاً یہ کہ میں نماز کے مباح ہونے کے لیے وضو کرتا ہوں۔[1

 بِسْمِ اللہِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِیْم پڑھ کر وضو کرنا۔ بعض روایات میں وضو کی بِسْمِ اللہِ  اِس طرح سے آئی ہے: بِسْمِ اللہِ الْعَظِیْمِ وَالْحَمْدُلِلہِ عَلٰی دِیْنِ الْاِسْلَامِ[2]؎ اور بعض روایات میں اس طرح بھی ہے: بِسْمِ اللہِ وَالْحَمْدُلِلہِ ۔

اور وضو کے دوران یہ دُعا پڑھنا مسنون ہے

 اَللّٰھُمَّ اغْفِرْلِیْ ذَنْۢبِیْ وَوَسِّعْ لِیْ فِیْ دَارِیْ  وَبَارِکْ لِیْ فِیْ رِزْقِیْ [3

ترجمہ: اے اللہ! میرے گناہوں کو معاف کردے اور میرے گھر کو وسیع کردے اور میرے رزق میں برکت عطا فرما۔

 دونوں ہاتھوں پہنچوں تک دھونا۔[4

 مسواک کرنا، اگر مسواک نہ ہو تو اُنگلی سے دانتوں کو ملنا۔[5

 تین بار کلّی کرنا۔[6

 تین بار ناک میں پانی ڈالنا اور تین بار ناک چھنکنا۔[7

 کلّی اور ناک میں پانی چڑھانے میں مبالغہ کرنا اگر روزہ نہ ہو۔[8

 ہر عضو کو تین بار دھونا۔[9

 چہرہ دھوتے وقت داڑھی کا خلال کرنا۔[10

فائدہ:داڑھی میں خلال کا مسنون طریقہ یہ ہے کہ تین بار چہرہ دھونے کے بعد ہتھیلی میں پانی لے کر ٹھوڑی کے پاس تالو میں ڈالے اور داڑھی کا خلال کرے اور کہے

 ہٰکَذَاۤ اَمَرَنِیْ رَبِّیْ

 ہاتھوں اور پیروں کو دھوتے وقت اُنگلیوں کا خلال کرنا۔[11

 ایک بار تمام سر کا مسح کرنا۔[12

 سر کے مسح کے ساتھ کانوں کا مسح کرنا۔[13

 اعضاءِ وضو کو مَل مَل کر دھونا۔[14

 پے در پے وضو کرنا۔[15

 ترتیب وار وضو کرنا۔[16

 داہنی طرف سے پہلے دھونا۔[17

 سر کے اگلے حصے سے مسح شروع کرنا۔[18

 گردن کا مسح کرنا۔ حلق کا مسح نہ کرے، یہ بدعت ہے۔[19

 وضو کے بعد کلمہ شہادت اَشہَدُ اَنْ لَّآ اِلٰہَ اِلَّا اللہُ وَحْدَہٗ لَاشَرِیْکَ لَہٗ وَاَشْہَدُ اَنَّ مُحَمَّدًا عَبْدُہٗ وَرَسُوْلُہٗ پڑھ کر یہ دعا پڑھیں

 اَللّٰھُمَّ اجْعَلْنِیْ مِنَ التَّوَّابِیْنَ وَاجْعَلْنِیْ مِنَ الْمُتَطَہِّرِیْنَ [20

ترجمہ: اے اللہ! تو مجھے بہت توبہ کرنے والوں میں اور خوب پاکی حاصل کرنے والوں میں شامل فرما۔

فائدہ: اِس دُعا کے متعلق مرقاۃ شرح مشکوٰۃ میں مُلّا علی قاری رحمۃ اللہ علیہ نے فرمایا کہ وضو ظاہری طہارت ہے۔ اس دُعا سے باطنی طہارت کی درخواست پیش کی گئی ہے کہ اوّل اِختیاری تھی وہ ہم کرچکے ہیں، اب آپ اپنی رحمت سے ہمارے باطن کو بھی پاک فرمادیجیے۔

 

 

[1]؎        سنن نسائی:1/24 باب النیۃ فی الوضو
[2]؎       حاشیۃ الطحطاوی علی المراقی: 1/105/مجمع الزوائد: 1/513(1112)/ عمل الیوم واللیلۃ :42 (80)
[3]؎    جامع الترمذی:2/188،باب من ابواب جامع الدعوات
[4]؎       سنن ابی داؤد :1/15باب صفۃ وضوء النّبی صلّی اللہ علیہ وسلّم
[5]؎      حاشیۃ الطحطاوی علی المراقی:1/105، 106
[6]؎     سنن ابی داؤد:1/14 ، باب صفۃ وضوء النّبی صلّی اللہ علیہ وسلّم
[7]؎    سنن ابی داؤد:1/15 ، باب صفۃ وضوء النّبی صلّی اللہ علیہ وسلّم
[8]؎     سنن ابی داؤد:1/15 ، باب صفۃ وضوء النّبی صلّی اللہ علیہ وسلّم
[9]؎    صحیح البخاری:1/27 ، 28 ،  باب الوضوء ثلثا ثلثا
[10]؎     سنن ابی داؤد:1/19 باب تخلیل اللحیۃ
[11]؎     سنن ابی داؤد:1/19 باب الاستنثار
[12]؎     السعایۃ :1/132رد المحتار:کتاب الطہارۃ :1/243
[13]؎     سنن النسائی:1/29 باب مسح الاذنین مع الراس
[14]؎     حاشیۃ الطحطاوی علی المراقی:112
[15]؎    حاشیۃ الطحطاوی علی المراقی: 113
[16]؎     الہدایۃ : 1/23
[17]؎    صحیح البخاری:1/29 (169) باب التیمن فی الوضوء والغسل
[18]؎     صحیح البخاری:1/31 ، باب مسح الرأس
[19]؎      حاشیۃ الطحطاوی علی المراقی: 1/115
[20]؎  جامع الترمذی:1/18 باب مایقال بعد الوضوءِ …مرقاۃ المفاتیح: 2/16 (فائدہ) فیہ اشارۃ الٰی ان طہارۃ الأعضاء الظاہرۃ لما کانت بیدنا فطہرنا ہا واما طہارۃ الاحوال الباطنہ فانما ہی بیدک فانت طہرہا بفضلک وکرمک

فرائض وضو

by مفتی امان اللہ خان قائمخانی

فرائض وضو

 فائدہ: وضو کا مندرجہ بالا طریقہ سنّت کے مطابق ہے۔

وضو میں بعض چیزیں فرض ہیں کہ اگر ان میں سے ایک بھی چھوٹ جائے یا کچھ کمی رہ جائے تو وضو نہیں ہوتا اور آدمی بے وضو رہتا ہے۔   وضو میں صرف چار چیزیں فرض ہیں

 ایک مرتبہ سارا منہ دھونا۔[1

 ایک ایک بار کہنیوں سمیت دونوں ہاتھ دھونا۔[2

ایک بار چوتھائی سر کا مسح کرنا۔[3

 ایک ایک مرتبہ ٹخنوں سمیت دونوں پاؤں دھونا۔[4

اِتنا کرنے سے وضو ہوجائے گا لیکن سنّت کے مطابق وضو کرنے سے وضو کامل ہوتا ہے اور زِیادہ ثواب ملتا ہے۔

[1]؎     حاشیۃ الطحطاوی علی المراقی: 1/91 ، 92… الہدایۃ :1/16…ردالمحتار: 1/208 ، 209
[2]؎     حاشیۃ الطحطاوی علی المراقی :1/94 ، رد المحتار:1/211 ، 212 … الہدایۃ: 1/16
[3]؎     رد المحتار:1/213… حاشیۃ الطحطاوی علی المراقی: 1/95…الہدایۃ: 1/16
[4]؎      رد المحتار: 1/211،212… حاشیۃ الطحطاوی علی المراقی :1/94 ، 95